• slidebg1
    افضل الصدیقین
    Azmat e Shan e Siddiq e Akbar By

    Murshid Kamil Hazrat Peer Prof.

    Dr. Ali Muhammad Damat Barakatu.
  • slidebg1
    وسیلۂ نجات
    Azmat e Shan e Mustafa ﷺ By

    Murshid Kamil Hazrat Peer Prof.

    Dr.Ali Muhammad Damat Barakatu.
  • 3dbg
    افضلیت صدیق اکبر
    اجماع امت

    حضرت علی رضی اللہ عنہ سے روایت ہے کہ حضور ﷺ نے ارشاد فرمایا
    خیر تین سو سترّ خصائل پر مشتمل ہے، جب اللہ تعالیٰ کسی سے بھلائی کا ارادہ فرماتا ہے
    تو اسے ان میں سے کوئی ایک خصلت عطا فرما دیتا ہے
    جس کے ساتھ اُسے جنت میں داخل فرماتا ہے۔ حضرت ابو بکرصدیق رضی اللہ عنہ نے عرض کی
    یارسول اللہ ﷺ اس میں سے کوئی چیز مجھ میں ہے؟

    آپ ﷺ نے فرمایا: ہاں آپ میں سب جمع ہیں۔
    افضل خلق اللہ بعد الانبیا ء بالتحقیق

Superiority Of Hazrat Abu Bakr Siddiq

The following is a hadith narration from the Prophet Muhammad :

The most virtuous one among people after prophets is Abu Bakr. (Kanzul-Ummal, 10/543; as-Sawaiq, 249; Suyuti, Tarikhul-Khulafa, 42) 

The following is stated in another hadith:

Jibril came to me and I asked him who was going to migrate with me. He said,

"Abu Bakr. He is the one that will undertake the duty of leading your ummah after you. He is the best one of your ummah." (Kanzul-Ummal, 10/550-551)

While Abud-Darda was walking in front of Abu Bakr, the Prophet said to him,

“O Abud-Darda! Are you walking in front of a person who is better than you? The sun has not risen and set over a person better than Abu Bakr after prophets and messengers." (Majmauz-Zawaid, 9/44)

In addition, the following explanation of Abdullah b. Umar sheds light on the issue:

"We would rate people during the time of the Messenger of Allah and list them as follows:

The most virtuous one of the ummah is Abu Bakr, then Umar, then Uthman and then Ali. The Prophet would hear it but he would not oppose." (Bukhari, Fadailus-Sahaba 4; Abu Dawud, Sunnah, 8, 4627-4628)

فضائل سیدنا ابوبکر قرآن و حدیث میں

فضائل سیدنا ابوبکر رضی اللہ عنہ قرآن میں

ثَانِىَ ٱثْنَيْنِ إِذْ هُمَا فِى ٱلْغَارِ إِذْ يَقُولُ لِصَحِبِهِۦ لَا تَحْزَنْ إِنَّ ٱللَّهَ مَعَنَا ۖ فَأَنزَلَ ٱللَّهُ سَكِينَتَهُۥ عَلَيْهِ ۔ ‏التوبة ـ ۴۰

آپ دو میں سے دوسرے تھے، جب وہ دونوں (یعنی حضور ﷺ اور حضرت ابو بکر رضی اللہ عنہ) غار میں تھے، غم نہ کر، بیشک اللہ ہمارے ساتھ ہے تو اللہ نےاس پر اپنی تسکین نازل فرمائی۔ (کنزالایمان)

صدرالافاضل مولانا سید محمد نعیم الدین مراد آبادی رحمتہ اللہ لکھتے ہیں
حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کی صحابیت اس آیت سے ثابت ہےـ حسن بن فضل نے فرمایا ، جو شخص حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کی صحابیت کا انکار کرےوہ نص قرآنی کا منکر ہو کر کافر ہوا ـ (تفسیر بغوی،تفسیرمظہری، تفسیر خزائن العرفان)

مرزا مظہرجان جاناں رحمتہ اللہ إِنَّ ٱللَّهَ مَعَنَا کی تفسیر میں فرماتے ہیں
حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کےلیے یہی فضلیت کافی ہے کہ حضور ﷺ نے ان کے لیے بغیر کسی فرق کے، اللہ تعالیٰ کی اس معیت کو ثابت کیا جو انہیں خود حاصل تھی ـ جس نے سیدنا ابوبکر رضی اللہ عنہ کی فضلیت کا انکار کیا اور اس اس نے اس آیت کریمہ کا انکار کیا اور کفر کا ارتکاب کیاـ (تفسیرمظہری)
سَكِينَتَهُۥ عَلَيْهِ کی تفسیرمیں حضرت عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہ فرماتے ہیں، یہ تسکین حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ پر نازل ہوئی کیونکہ نبی کریم ﷺ کے ساتھ تو سکینت ہمیشہ ہی رہی تھی ـ (از التہ الخفاء ج ۱۰۷:۲، تاریخ الخلفا ء : ۱۱۱)

ابن عساکر رحمتہ اللہ نے روایت کیا ہے کہ اللہ تعالیٰ نے رسول کریم ﷺ کے سلسلے میں حضرت ابوبکر رضی اللہ عنہ کے سوا تمام مسلمانوں پر عتاب فرمایا ہے جیسا کہ مزکورہ بالاآیت کریمہ کے آغاز میں ہےـ ‏إِلَّا تَنصُرُوهُ فَقَدْ نَصَرَهُ ٱللَّهُ إِذْ أَخْرَجَهُ ٱلَّذِينَ كَفَرُوا۟ ـ ‏التوبة 40
اگر تم محبوب ﷺ کی مدد نہ کرو تو بیشک اللہ نے انکی مدد فرمائی، جب کافرں کی شرارت سےانہیں باہر تشریف لے جانا ہوا (ہجرت کےلیے) ـ (کنزالایمان)

Status Of Abu Akbar

  1. The Holy Prophet SalAllah Alaihi Wasalam said: Never was anything revealed to me that I did not pour into the heart of Abu Bakr.
  2. Never has the sun risen or set on a person, other than a prophet, greater than Abu Bakr.

Read More

Love for Hazrat Ali

One day Abu Bakr as-Siddiq Radi Allahu anhu came to Rasûlullah’s ‘sall-Allâhu ’alaihi wa sallam’ place. He was about to enter, when Alî bin Abî Tâlib ‘radiy-Allâhu ’anh’ arrived, too. Abû Bakr stepped backwards and said,
“After you, Ya Ali.” The latter replied and the following long dialogue took place between them:
Hazarath Ali razi allah anhu

Read More

The superiority of Abu-Bakr Siddiq

It is a collective agreement [Ijmāʻ] of the scholars of Ahl as-Sunnah wal-Jamāʻh that the greatest person in this Ummah is Abū Bakr, then ʿUmar, then ʿUs̱mān and then ʿAlī, radiyAllahu anhum. The greatest Sufi masters have also affirmed this tenet of the Sunnī creed. Particularly, the Naqshbandī masters hold this belief firmly, not only based on the authentic narrations, but also by their Kashf.

Read More